مطلوبہ
معلومات جو انصاف کے کٹہرے میں لائے

سامی جسیم مُحمد الجبوری

پچاس لاکھ ڈالر تک

سامی جسیم مُحمد الجبوری جسے حاجی حمید کے نام سے بھی جانا جاتا ہے عراق اور شام کی اسلامی ریاست (آئی سس) کا ایک سینئر رہنما ہے اور آئی سس کی پُرانی تنظیم عراق میں القائدہ (اے کیو آئی) کا ایک اہم رُکن ہے۔ مُحمد الجبوری نے آئی سس کی کاروائیوں کے لیے مالی انتظامات کی نگرانی کرنے میں ایک اہم کردار ادا کیا ہے۔

2014 میں آئی سس کے ڈپٹی کے طور پر اُس نے آئی سس کے مالی وزیر کی حیثیت سے کام کیا جس میں اُس نے گروہ کے غیر قانونی سرگرمیوں جس میں تیل، گیس عتیقیات، اور معدنیات کی غیرقانونی خرید و فروخت میں نگرانی کی۔

ستمبر 2015 میں امریکی محکمہ خزانہ نے عدالتی حکم 13224 کے تحت اُسے ایک خاص عالمی دہشت گرد قرار دیا جس کے تحت دہشت گرد اور اُن پر جو دہشت گردوں یا دہشت گرد کاروائیون میں مدد دیتے ہیں پر مالی پابندیاں عائد کی گئی ہیں۔

جون 2014 میں آئی سس جسے دائش کے نام سے بھی جانا جاتا ہے نے عراق اور شام کے کچھ حصوں کو اپنے قبضے میں لے لیا اور اُسے ایک اسلامی “خلافت” کہنا شروع کر دیا اور البغدادی کو ایک “خلیفہ” مقرر کر دیا۔ حالیہ سالوں میں آئی سس نے دوسرے جہادی گروہوں کی حمایت حاصل کی ہےاور پوری دنیا میں لوگوں کو انتہا پسند بنایا ہے اور اُنہیں دُنیا بھر میں حملوں کو اُکسایا ہے۔

آئی سس کے خلاف ہماری جنگ میں ان انعامات کی پیشکش ایک اہم موقع پر کی جا رہی ہے۔ جیسے جیسے آئی سس کو شکست دی جا رہی ہے ہم مصمم ارادے کے ساتھ گروہ کے لیڈران کی شاخت اور اُن کی تلاش کر رہے ہیں تا کہ اقوام کا عالمی اتحاد جو کہ آئی سس کو شکست دینے میں کوشاں ہے آئی سس کے بقیہ حصوں کو اس کی عالمی کوشش میں روکا جا سکے۔

ایک اور تصویر

سامی جسیم مُحمد الجبوری