دہشت گرد واقعہ
معلومات جو کہ۔۔۔

اسلامی انقلابی محافظ فوج

امریکی سٹیٹ ڈپارٹمنٹ کا انعامات برائے انصاف پروگرام ایسی معلومات کے لیے 15 ملین ڈالر تک کے انعام کی پیشکش کر رہا ہے جس سے ایران کی اسلامی انقلابی محافظ فوج (آئی آر جی سی) اور اس کی شاخوں جن میں آئی آر جی سی-قرد فوج شامل ہیں کے مالی طریقہ کار میں خلل ڈالنے میں مدد ملے۔ آئی آر جی سی نے دُنیا بھر میں کئی دہشت گرد حملوں اور کاروائیوں کو مالی طور پر مدد دی ہے۔ آئی آر جی سی – قیو ایف ایران کی دہشت گرد سرگرمیوں کی ایران سے باہر اپنی نائب جماعتوں حزباللہ اور حماس کے ذریعے قیادت کرتی ہے۔

محکمہ ایسی معلومات کے لیے جس سے آئی آر جی سی، آئی آر جی سی-کیو ایف، اس کی شاخوں یا اہم مالی آمدنی سہل بنانے والے طریقہ کار شامل ہیں کے بارے معلومات کے لیے انعام کی پیشکش کر رہا ہے جس میں مدرجہ ذیل شام ہیں:

  • آئی آر جی سی کے مالی منصوبے جس میں تیل کے لیے پیسے؛
  • سامنے والی کمپنیاں جو کہ آئی آر جی سی کا حصہ ہیں اور اُن کی جانب سے بین الاقوامی سرگرمیوں میں شامل ہوتی ہیں؛
  • ایس تنظیمیں یا لوگ جو آئی آر جی سی کی امریکی پابندیوں سے بچ نکلنے میں مدد دیتے ہیں؛
  • باضابطہ ادارے جو آئی آر جی سی کے ساتھ کام کر رہے ہیں؛
  • آئی آر جی سی اپنی دہشت گرد اور فوجی نائب جماعتوں اور ساتھیوں کو پیسے جن طریقہ کار کے ذریعہ منتقل کر رہا ہے؛
  • آئی آر جی سی کو عطیہ دینے والے یا مالی طور پر مدد کرنے والے؛
  • مالی ادارے یا لین دین کرنے والے ادارے جو آئی آر جی سی کی کاروبار کرنے میں مدد دیتے ہیں؛
  • کاروبار یا سرمایہ کاری جس کے مالک آئی آر جی سی یا اس کی مالی مدد کرنے والے ہیں؛
  • سامنے والی کمپنیاں جو آئی آر جس سی کے لیے دوہری ٹیکنالوجی کا بین الاقوامی حصول کرتی ہیں اور؛
  • مجرمانہ منصوبے جس میں آئی آر جی سی کے ممبران اور ساتھ دینے والے شامل ہیں جو کہ تنظیم کو مالی طور پر فائدہ پہنچا رہے ہیں۔

1979 میں ایرانی انقلاب کے بعد آئی آر جی سی کی بنیاد رکھی گئی تھی۔ یہ ایرانی فوج کی ایک شاخ ہے اور کُدز فوج کے ذریعے آئی آر جی سی پوری دنیا میں حکومت کے بین الاقوامی دہشت گرد حملوں کی ہدایت اور اُنہیں پورا کرنے میں ایک اہم کردار ادا کرتی ہے۔

15 اپریل 2019 کو سٹیٹ ڈپارٹمنٹ نے آئی آر جی سی کو تبدیلی وطن اور قومی سیکشن 219 کے قانون کے تحت ایک دہشت گرد تنظیم قرار دیا۔ 2017 میں امریکی محکمہ خزانہ نے آئی آر جی سی کو عدالتی حُکم 13224 کے تحت آئی آر جی سی-کیو ایف کو اُس کے سرگرمیوں میں مدد دینے کی وجہ سے ایک خاص عالمی دہشت گرد قرار دیا۔

40 سال پہلے وجود میں آنے سے پہلے، آئی آر جی سی پوری دنیا میں دہشت گرد منصوبوں اور پوری دنیا میں دہشت گردی میں مدد دینے میں ملوث رہی ہے۔ آئی آر جی سی ایسے کئی حملوں کی ذمہ دار ہے جن میں امریکی شہریوں اور جگہوں پر حملے کیے گئے اور جن میں امریکی شہری جان بحق ہوئے۔عراق اور افغانستان میں بھی آئی آر جی سی نے امریکی اور اتحادی فوجوں اور سفارتی مشن پر حملے کیے ہیں۔

اس کے علاوہ گروہ نے بہت سے امریکی شہریوں کو یرغمال بنایا ہے اور ناجائز طور پر قبضے میں رکھا ہے اور جن میں سے کئی آج بھی ایران کی محکومی میں ہیں۔

آئی آر جی سی – کیو ایف نے دنیا بھی میں دہشت گرد سرگرمیوں کی منصوبہ بندی کی ہے۔ اُن ملکوں میں جرمنی، بوسنیا، بلغاریہ، کینیا، بحرین، تُرکی اور امریکہ شامل ہیں۔

ایک اور تصویر

اسلامی انقلابی محافظ فوج
اسلامی انقلابی محافظ فوج
اسلامی انقلابی محافظ فوج
اسلامی انقلابی محافظ فوج
اسلامی انقلابی محافظ فوج
اسلامی انقلابی محافظ فوج
اسلامی انقلابی محافظ فوج