بڑے پیمانے پر تباہی کے ہتھیار

وسیع تباہی کے حامل ہتھیاروں (ڈبلیو ایم ڈی) کے حصول اور استعمال کا ارادہ رکھنے والے دہشت گرد عالمی امن و سلامتی کے لئے شدید خطرہ پیش کرتے ہیں۔ ڈبلیو ایم ڈی شہریوں کی بڑی تعداد کو قتل کر سکتے ہيں اور مقامی ہنگامی حالات سے نمٹنے کے یونٹوں کو بے اثر کر سکتے ہیں۔ ڈبلیو ایم ڈی میں نیوکلیائی، کیمیاوی، حیاتیاتی اور تابکاری ہتھیاروں کے علاوہ بہت زیادہ تباہی پھیلانے والے بڑے روایتی بم بھی شامل ہيں۔.

امریکہ دہشت گردوں کو ان تباہ کن ہتھیاروں کے استعمال سے روکنے کا مصمم ارادہ رکھتا ہے۔.

اگر آپ ایسی معلومات فراہم کرتے ہیں جن سے ایسے کسی فرد کی گرفتاری یا سزایابی ہو سکے جو امریکی شہریوں یا امریکی جائیداد کے خلاف ڈبلیو ایم ڈی پر مشتمل دہشت گرد کارروائی کے ارتکاب کی کوشش کرتا ہے، اسے انجام دیتا ہے، انجام دینے کی سازش کرتا ہے یا اس کی اعانت کرتا ہے تو آپ انعام حاصل کرنے کے مستحق ہو سکتے ہيں۔.

نوٹ: جان بوجھ کر کئے گئے کسی بھی غلط دعوے کی اطلاع موزوں حکام کو دی جائے گی۔.

جولائی 15، 2006 کو صدر بش اور صدر پوٹن نے نیوکلیائی دہشت گردی سے مقابلے کے لئے عالمگیر اقدام شروع کیا۔ اس منفرد اقدام کا مقصد نیوکلیائی دہشت گردی کے عالمگیر خطرے کا مقابلہ کرنے کے لئے اشتراک عمل کو وسیع اور مضبوط کرنا ہے۔.